تم غریب کرکٹر ہو تمہیں اتنے پیسے ہی ملیں گے ۔۔۔ ویسٹ انڈیز کے کھلاڑیوں کو میچ جیتنے پر کتنا بونس ملے گا اور انگلینڈ کے کھلاڑیوں کا بونس کتنا ہو گا؟ فرق اور وجہ جان کر آپ بھی سر پکڑ لیں گے

مانچسٹر (ویب ڈیسک) امیر اور غریب بورڈز کے کھلاڑیوں کے بونس میں بھی زمین آسمان کا فرق ہے جس کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ انگلینڈ کو اس کے میدانوں پر سیریز میں مات دینے پر ویسٹ انڈین کرکٹرز کو فی کس صرف 1875 پاﺅنڈ انعام ملے گا۔

تفصیلات کے مطابق ساﺅتھمپٹن میں کھیلے گئے پہلے ٹیسٹ میں ویسٹ انڈیز کی ٹیم نے 4 وکٹ سے کامیابی حاصل کی مگر کنٹریکٹ کے تحت انہیں کامیابی پر کوئی انعامی رقم نہیں ملے گی لیکن اگر وہ اگلا میچ جیت کر وزڈن ٹرافی اپنے پاس رکھنے میں کامیاب ہوگئے تو پھر سیریز فتح کیلئے مختص 23800 پاﺅنڈ کا بونس ملے گا جس میں آدھی رقم پورے 15 رکنی سکواڈ میں تقسیم ہو گی، باقی رقم پلیئنگ الیون کا حصہ بننے والے کھلاڑیوں کو ملے گی، اس طرح ایک پلیئر کے حصے میں صرف 1600 سے لے کر 1875 پاﺅنڈ آئیں گے۔وسری جانب موجودہ کنٹریکٹ کے تحت ایک ٹیسٹ فتح پر انگلش کرکٹرز کو فی کس 6500 پاﺅنڈ بونس ملتا ہے اور اگر وہ اگلا میچ جیت کر سیریز 1-1 سے برابر کردیتے ہیں تو اس رقم کے حق دار بن جائیں گے جبکہ سیریز میں 1-2 سے کامیابی پر ہر کھلاڑی کو اضافی 19500 پاﺅنڈ ملیں گے جس سے ان کا مجموعی سیریز فتح بونس 32500 فی کس تک پہنچ جائے گا۔واضح رہے کہ مئی میں ویسٹ انڈین کرکٹ بورڈ نے دیگر سٹاف کی طرح پلیئرز کے معاوضوں میں بھی 50 فیصد کٹوتی کا اعلان کیا تھا جس کا اطلاق جولائی سے دسمبر تک ہونا ہے، بورڈ اور پلیئرز ایسوسی ایشن میں معاہدے کے تحت کھلاڑیوں کی انٹرنیشنل میچ فیس میں کوئی کٹوتی نہیں ہوگی۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *