تمام خبروں کا ڈراپ سین ۔۔۔ لاہور کے میو ہسپتال میں جاں بحق ہونے والا شخص کورونا وائرس نہیں بلکہ کس مرض کا شکار تھا؟تازہ ترین خبر

لاہور(ویب ڈیسک)لاہور کے میو ہسپتال میں جاں بحق ہونے والا شخص واقعی کورونا وائرس کا شکار تھا یا نہیں؟ وزیرصحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے سرکاری موقف پیش کردیا۔ڈاکٹر یاسمین کا کہنا ہے کہ میو ہسپتال میں وفات پانے والے شخص کو گزشتہ شب منڈی بہاوالدین سے لایا گیا تھا اور وہ قومہ میں تھے۔ انہوں نے

کہا اس شخص کو خون بہاو کا مسئلہ بھی تھا۔ تاہم اس شخص کی ٹریول ہسٹری کی وجہ سے انہیں قرنطینہ میں رکھا گیا۔ یاسمین راشد کے مطابق یہ مریض ایران سے مسقط گئے تھے اور مسقط سے پاکستان آئے تھے۔ اس لئے ٹیسٹ کرنے کا فیصلہ کیا گیا تاہم اس کی کورونا وائرس کی وجہ سے ہلاکت کے بارے میں وہ رپورٹ کے نتائج آنے کے بعد ہی تصدیق یا تردید کرسکیں گی۔پنجاب میں مزید پانچ مریضوں میں کورونا وائرس کی تصدیق کردی گئی ہے۔ڈی جی خان میں آنے والے بیالیس میں سے پانچ میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔جس کے بعد پنجاب میں مریضوں کی کل تعداد چھ ہوگئی ہے۔ وزیر صحت پنجاب یاسمین راشد نے لاہور میں پریس کا نفرنس کرتے ہوئے بتایا ہے کہ پنجاب کے ضلع ڈی جی خان میں ایران سے آنے والے سات سو چھتیس افراد زیر نگرانی ہیں۔ پہلے مرحلے میں بیالیس لوگوں کے ٹیسٹ ہوئے دوسرے مرحلے میں اڑتالیس لوگوں کے ٹیسٹ کئے جارہے ہیں۔انہوں نے واضح کیا کہ پنجاب حکومت مریضوں کی تعداد کے حوالے سے کسی قسم کے اعدادوشمار کو چھپا نہیںرہی۔سکولز ، کالجز، یونیورسٹیاں بند کردی ہیں، کوشش ہے کہ کاروبار چلتے رہیں۔انہوں نے کہا لوگ چھٹیوں کو سیرسپاٹے کا موقع نہ سمجھیں یہ مجبوری ہے اور گھروں پر رہیں۔ انہوں نے کہا تمام تر تفصیلات حکومت روزانہ کی بنیاد پرجاری کرے گی۔ انہوں نے کہا یہ ایک موذی مرض کے خلاف جنگ ہے جس کے خلاف میڈیا اور تمام اداروں اور افراد کو مل کر لڑنا ہوگا۔جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق لاہور کے میو ہسپتال میں کورونا وائرس کا مشتبہ مریض آج دم توڑ گیاہے جس پر اب ہسپتال کے سی ای او کا بیان بھی سامنے آ گیاہے جس میں انہوں نے تصدیق کر دی ہے ۔تفصیلات کے مطابق سی ای او میو ہسپتال کا کہناتھا کہ میو ہسپتال میں کرونا وائرس کا مشتبہ مریض دم توڑ گیاہے ، گزشتہ رات 50 سالہ شہری کو حافظ آباد سے ہسپتال لایا گیا تھا ، مشتبہ مریض ایران ، مسقط سے آیا تھا اور اس میں کچھ علامات بھی تھیں ۔ پروفیسر اسد اسلم کا کہناتھا کہ مریض کے کورونا وائرس ٹیسٹ کیلئے نمونے لیباٹری بھجوائے گئے ہیں ، ٹیسٹ کی حتمی رپورٹ ابھی آنا باقی ہے ۔سی ای او کا کہناتھا کہ مریض کو بلیڈنگ ، سانس میں دشواری ، نزلہ زکام اور بخار تھا۔ڈاکٹرز کا کہناتھا کہ مریض کو میوہسپتال کے آئی سو لیشن وارڈ میں رکھا گیا تھا ۔ ترجمان محکمہ صحت کی جانب سے جاری کردہ بیان میں بتایا گیاہے کہ جاں بحق ہونے والے مریض کے سیمپل لیب بھجوائے گئے ہیں اور ا س کی رپورٹ دوپہر تین بجے آئے گئی اور مزید تفصیلات سامنے آ سکیں گی ۔

Sharing is caring!

Comments are closed.