‘سونے کی قیمت دھڑام سے نیچے آ گری، پاکستان میں فی تولہ سونا کتنے کا ہوگیا؟ سُناروں کی دُکانوں پر رش لگ گیا

لاہور(نیوز ڈیسک ) ملک بھر میں رواں ہفتے کے تیسرے کاروباری روز کے دوران فی تولہ سونے کی قیمت میں ایک مرتبہ پھر 2500روپے کی بڑی کمی ریکارڈ کی گئی۔تفصیلات کے مطابق بین الاقوامی مارکیٹ میں سونے کی قیمتوں میں تیزی سے کمی آ رہی ہے، آج عالمی مارکیٹ میں فی اونس سونے کی قیمت میں

31 امریکی ڈالر کی کمی دیکھی گئی جس کے بعد عالمی مارکیٹ میں سونے کی نئی قیمت 1 ہزار 959 امریکی کرنسی ہو گئی ہے۔بین الاقوامی مارکیٹ میں فی اونس سونا سستا ہونے کے بعد ملکی صرافہ مارکیٹوں لاہور، کراچی، اسلام آباد، پشاور، کوئٹہ، حیدر آباد، سکھر، کوئٹہ سمیت دیگر جگہوں پر فی تولہ سونے کی قیمت میں 2500 روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جس کے بعد سونے کی نئی قیمت ایک لاکھ 15 ہزار 200 روپے ہو گئی ہے۔ اُدھر فی تولہ سونے کی طرح دس گرام سونے کی قیمت میں بھی 2144 روپے کی کمی دیکھی گئی جس کے بعد دس گرام سونے کی قیمت ایک مرتبہ پھر ایک لاکھ روپے سے گر کر 98 ہزار 765 روپے ہو گئی ہے۔دوسری جانب پاکستان اسٹاک ایکسچینج کو ایشیا کی بہترین مارکیٹ قرار دیا گیا۔تفصیلات کے مطابق پاکستان اسٹاک ایکسچینج نے ایک بار پھر ایشیا کی بہترین اسٹاک مارکیٹ کا اعزاز حاصل کر لیا۔نیویارک میں قائم ’ریسرچ فرم مارکیٹ کرنٹس ویلتھ نیٹ‘ کے مطابق 2020 میں ایشیا میں سب سے بہتر کارگردگی پاکستان اسٹاک ایکسچینج کی رہی۔عالمی سطح پر پاکستان اسٹاک ایکسچینج چوتھی بہترین اسٹاک مارکیٹ رہی۔پی ایس ایکس کے سی او ایم ڈی فرخ ایچ خان نے اس حوالے سے نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے کورونا کا بہترین انداز میں

مقابلہ کیا۔اس کی معیشت دیگر ممالک کے مقابلے میں تیزی سے بحال ہو رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ غیر ملکی خریدار جو پچھلے دو سال سے پاکستان اسٹاک ایکسچینج کے خالص فروخت کنندہ تھے ،وہ اگست کے مہینے میں خالص خریدار بن کر ابھرے۔اس کی وجہ یہ ہے کہ پاکستان قومی صحت اور معاشی انتظام کاری کے تناظر میں کورونا بہترین انداز میں نمٹا ہے۔فوری اور موثر اقدامات کے نتیجے میں ملکی معیشت اور اسٹاک مارکیٹ ٹریک پر آ گئی۔واضح رہے کہ رواں سال پاکستان اسٹاک ایکسچینج پر دہشتگردوں کی جانب سے حملہ بھی کیا گیا تھا جسے ناکام بنا دیا گیا تھا۔ دہشت گرد حملے کے باوجود پاکستان سٹاک ایکسچینج میں سرمایہ کاروں کی آمد جاری رہی۔اسٹاک ایکسچینج میں سرمایہ کاروں نے کاروبار میں دلچسپی لی ۔مارکیٹس کھلی رہی،دیگر ممالک میں جب اس طرح کے واقعات ہوتے ہیں تو پوری کی پوری مارکیٹ کریش ہو جاتی ہے۔ لیکن اس حملے کے وقت بھی مارکیٹ چلتی رہی۔اور 34 ہزار پوائنٹس کی تیزی دیکھی گئی۔ حملے کے اگلے روز بھی کاروبار کا آغاز اچھے انداز میں ہوا۔اور ایک سو سے زائد پوائنٹس کا اضافہ دیکھا گیا۔اتنے بڑے دہشت گردی کے واقعے کے باوجود بھی سرمایہ کاروں کی بڑی تعداد آئی تھی ۔پاکستان اسٹاک ایکسچینج پر حملے کے دوسرے روز سرمایہ کاروں نے وطن سے محبت اور دہشت گردی کے خلاف بھرپور جرات کا مظاہرہ کرتے ہوئے ٹریڈنگ میں بھرپور حصہ لیا تھا

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *