بڑے کام کی خبر :ڈالر اور سونے کی قیمتوں میں ایک ساتھ حیران کن کمی ہو گئی

لاہور (ویب ڈیسک) شاندار خبر، سونے اور ڈالر کی قیمت میں ایک ساتھ بڑی کمی آ گئی۔ سونے کی فی تولہ قیمت میں 600روپے کی کمی ،تفصیلات کے مطابق عالمی مارکیٹ میں سونے کی فی اونس قیمت چھ ڈالر کی کمی سے 1927ڈالر فی اونس ہوگئی اور مقامی مارکیٹ میں فی تولہ سونے کی

قیمت 600روپے کی کمی سے 1لاکھ 15ہزار روپے اور دس گرام سونے کی قیمت514روپے کی کمی سے 98594روپے روپے ہوگئی ،چاندی کی فی تولہ قیمت بھی 10روپے گھٹ کر1360روپے فی تولہ ہوگئی۔دوسری جانب روپے کی قدر میں ٹھہراؤ کے باعث انٹر بینک میں ڈالر کی قدر 8سے 18پیسے گھٹ گئی جبکہ اوپن مارکیٹ میں 10پیسے کی کمی، فاریکس ایسوسی ایشن کی رپورٹ کے مطابق پیر کو انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت خرید 8پیسے کی کمی سے 165.88سے کم ہو کر 165.80 روپے اور قیمت فروخت 18پیسے کی کمی سے 166.18 کی بجائے 166.00روپے ہو گئی۔دوسری جانب ایک اور خبر کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے سکیورٹیز ایکسچینج کمیشن آف پاکستان کے جوائنٹ ڈائریکٹر ساجد گوندل کی گمشدگی سے متعلق درخواست کی سماعت کے دوران ریمارکس دیے ہیں کہ وزارت داخلہ کے ماتحت کام کرنے والے تحقیقاتی ادارے اور ایجنسیاں اپنے کام پر توجہ دینے کی بجائے ریئل سٹیٹ کے کاروبار میں ملوث ہیں۔ بی بی سی کی ایک رپورٹ کے مطابق ۔۔۔۔اُنھوں نے سیکرٹری داخلہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ وہ وزیر اعظم کو بتائیں کہ ان کے ماتحت کام کرنے والے ادارے پراپرٹی کے کام میں مصروف ہیں۔اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے پیر کو ساجد گوندل کی مبینہ گمشدگی کے بارے میں درخواست کی سماعت کے دوران سیکرٹری داخلہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ لوگوں کے جان ومال کے تحفظ کو یقینی بنانا ریاست کی ذمہ داری ہے۔سیکرٹری داخلہ نے عدالت کو بتایا کہ ساجد گوندل کی تلاش کے لیے اجلاس ہوئے ہیں تاہم ان کی تلاش میں ابھی تک کوئی پیش رفت نہیں ہوئی۔عدالت کے استفسار پر بتایا گیا کہ ایک ڈی ایس پی رینک کا افسر گمشدہ کے گھر گیا جہاں پر ان کے اہلخانہ کا بیان قملبند کیا جس پر بینچ کے سربراہ نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر کسی وزیر کا بیٹا گم ہوا ہوتا تو تب بھی پولیس سمیت ذمہ داران کا رویہ یہی ہوتا جس طرح ساجد گوندل کے بارے میں اپنایا گیا ہے۔چیف جسٹس نے سیکرٹری داخلہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ وہ اس وقت عدالت کے سامنے ریاست کی حیثیت سے کھڑے ہیں اور ریاست اس بات کو تسلیم کرے کہ وہ ساجد گوندل کو تلاش کرنے میں ناکام ہوئی ہے۔اُنھوں نے سیکرٹری داخلہ سے کہا کہ وہ وزیر اعظم کو بتائیں کہ ان کے ماتحت کام کرنے والے ادارے اپنے کام پر توجہ دینے کی بجائے پراپرٹی کے کام میں مصروف ہیں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *