کرونا کی وبا کے دوران یہ چھوٹا سا دکھنے والا شخص کس جرم میں گرفتار کیا گیا ہے ؟ جان کر تمام پاکستانی سناٹے میں آجائیں گے کیونکہ ۔۔۔!

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)آج کل لوگ سستی شہرت حاصل کرنے کے لئے اپنی جان کو داؤ پر لگانے سے بھی باز نہیں آتے ایسے بہت سے واقعات دیکھنے کو ملتے ہیں کہ جب سیلفی لینے یا کوئی خطرناک کام کر کے شہرت حاصل کرنے کے چکر میں جان کی بازی ہار دی گئی ہو ایسا ہی ایک واقعہ پاکستان میں بھی پیش آیا ہے۔

چلتی ٹرین کے نیچے لیٹنے والے شخص کو گرفتار کر لیا گیا۔تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں ایک شخص کو چلتی ٹرین کے نیچے لیٹے ہوئے دیکھا گیا۔بتایا کہ مذکورہ شخص نے 500 روپے کی شرط جیتنے کے لیے اپنی جان داؤ پر لگائی۔تاہم اب ساہیوال پولیس نے محمد سلیم نامی شخص کو ٹرین کی پٹڑی پر لیٹ کر ویڈیو بنوانے پر دفعہ 144 کی خلاف ورزی کرنے کے الزام میں گرفتار کرلیا ہے۔ انڈیپنڈنٹ اردو کی رپورٹ کے مطابق ٹرین کے نیچے لیٹنے والے شخص کی عمر 45 سال ہے جو لاہور سے آنے والی مال گاڑی کے نیچے لیٹ گیا تھا۔ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد پولیس نے ان کی تلاش شروع کی اور دو گھنٹے میں ہی گرفتار کرنے میں کامیاب ہوگئے۔ محمد سلیم کیخلاف ایف آئی آر میں جان سے ہاتھ دھونے کی کوشش کرنا اور کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے صوبے میں نافذ دفعہ 144 کی خلاف ورزی کرنے کی دفعات درج کی گئی ہیں۔ پولیس کے مطابق ملزم نے پٹری کے پاس مجمع لگا کر کورونا وائرس پھیلنے کا سبب بننے کا جرم بھی کیا ہے۔محمد سلیم کا کہنا ہے کہ ا نہیں کوئی حیران کن ویڈیو بنوا کر شہرت حاصل کرنے کا شوق تھا اور جب ان کے دوستوں نے انہیں چیلنج کیا کہ وہ چلتی ٹرین کے نیچے نہیں لیٹ سکیں گے تو انھوں نے فوراً قبول کر لیا۔پولیس کے مطابق ملزم کو کیمرے والا موبائل استعمال کرنا بھی نہیں آتا تا اور اب وہ قانونی کارروائی سے بچنے کے لیے بیانات تبدیل کر رہے ہیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.