چینی قیادت بھی حیران۔۔۔ چین میں شیخ رشید نے میجر جنرل آصف غفور کو پکڑ کر کیا کہہ دیا؟ ناقابلِ یقین انکشاف

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) شیخ رشید کا کہنا ہے کہ جب ہم بیجنگ میں تھے تو میں نے میجر جنرل آصف غفور کو پکڑ لیا، میری سروس ان سب میں سے زیادہ ہوچکی ہے، میں کالج چھوڑ کر ہی گراؤنڈ میں آجاتا تھا، تب یہ جو لوگ ہیں سارے ہیں کالجوں میں ہوا کرتے تھے اور میں


گراؤنڈ میں، میری معلومات بہت ساروں سے بہتر ہے، وقت آئے گا تو میں آپ کو بتاؤں گا کہ کونسا آتش گیر مادہ استعمال کرنا ہے، آدھا کلو، پاؤں والا یا پھر کونسا، پاکستان بیشک جنگ نہیں چاہتا لیکن جو اب جنگ ہوگی وہ آخری جنگ ہوگی۔ جس پر میجر جنرل آصف غفور نے مجھے کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ عوام میں کیا بات کرنی ہے، اگر کشمیریوں پر ظلم و ستم جاری رہا تو ہم خاموش نہیں رہیں گے، عمران خان، فوج اور عوام اپنے کشمیری بہن بھائیوں کے ساتھ کھڑے ہیں، اللہ تعالیٰ پاکستان کی مدد فرمائے کیونکہ عمران خان نے پاکستان کو ڈیفالٹ ہونے سے بچا لیا ہے۔ شیخ رشید کا کہنا تھا کہ گزشتہ ماہ ایک سال کے دوران مسافر ٹرینوں سے 10 ارب روپے کمائے ہیں ، ریلوے کا تمام خسارہ 5 سال کے بجائے 3 سال میں ختم کر دیں گے، جب کہ ان کا کہنا تھا کہ ایم ایل ون منصوبے سے ایک لاکھ افراد کے لیے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے ۔ مولانا فضل الرحمٰن کے آزادی مارچ کے متعلق گفتگو کرتے ہوئے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمٰن خود پھنسنے جا رہے ہیں، میں 26 اکتوبر کو بہت بڑی بات بتاؤں گا کہ مولانا کس کے ایجنڈے پر عمل کررہے ہیں۔ وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ نا شہباز کی بات فائنل ہے، نا مولانا فضل الرحمٰن کی اور نا ہی پیپلز پارٹی کی بات فائنل ہے۔ انہوں نے کہا تھا کہ شہباز شریف دونوں ہیں ادھر بھی ، اور اِدھر بھی، گیم ابھی اختتام تک نہیں پہنچا اور اکھاڑے میں ابھی کوئی بھی نہیں اترا۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان جیلوں میں موجود 6 افراد کو این آر او دے دیں تو اپوزیشن کی تحریک ٹھس ہو جائے۔ایک سوال کے جواب میں شیخ رشید نے کہا کہ گرفتار سیاستدانوں کے خلاف سارے مقدمات پچھلی حکومتوں نے بنائے، عمران خان مقدمات بنائیں گے تو درودیوار میں زلزلے آ جائیں گے ۔ خیال رہے کہ جمیعت علمائےاسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے 31 اکتوبر کو آزادی مارچ اور اسلام آباد میں دھرنے کی کال دے دی ہے، جس کی حمایت کا مسلم لیگ ن کے تاحیات قائد اور سابق وزیراعظم نواز شریف نے بھی اعلان کیا تھا اور ان کا کہنا تھا کہ ہم مولانا فضل الرحمٰن کے دھرنے کی مکمل حمایت کرتے ہیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.