وفاقی حکومت نے سابق وزیراعظم نواز شریف کو بڑی پیشکش کر دی

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وفاقی حکومت نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو بڑی پیشکش کر دی ہے۔ رپورٹ کے مطابق اسپیکر اسد قیصر کی زیر صدارت قومی اسمبلی کا اجلاس جاری ہے۔ مشیر برائے پارلیمانی امور ڈاکٹر بابر اعوان نے کہا کہ احساس پروگرام پاکستان کاشفاف ترین پروگرام ہے،

پروگرام سے متعلق ثانیہ نشتر کسی بھی کمیٹی میں بریفنگ دے سکتی ہیں، سی پیک معاملے پر مودی کو اعتراض ہو سکتا ہے لیکن ہماری اسمبلی کو نہیں، ہم سارے کاروبار کھولنا چاہتے ہیں، ایس او پیز پر بات کی جاسکتی ہے۔ ڈاکٹر بابر اعوان کا مزید کہنا تھا کہ مری ، گلیات میں سیاحت کھولنے کو تیار ہیں، پاکستان میں نواز شریف واپس آکر سیاست کرنا چاہتے ہیں تو ہمیں کوئی اعتراض نہیں، جسدن بھی وہ فیصلہ کریں گے کہ نواز شریف اور ان کے بچوں کی ٹکٹ ہم بک کروا کر دینے کو تیار ہیں۔ اسمبلی میں ن لیگی رکن مرتضیٰ جاوید عباسی نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد جیسے شہر میں وینٹی لیٹرز میسر نہیں، مہنگائی کے تناسب سے سرکاری ملازمین کی تنخواؤں میں 23 فیصد اضافہ بنتا ہے، اس مرتبہ بجٹ کی تقریر پر وزیر موصوف کے چہرے پر مایوسی نظر آرہی تھی، فاٹا کا آئینی طور پر انضمام میری پارٹی اور نواز شریف نے کیا تھا، فاٹا کے لیے جو فنڈز رکھے وہ استعمال نہیں کیے گئے، میرے حلقے میں صرف 22 لوگوں کو احساس پروگرام کے تحت امداد ملی، مینگل صاحب کی بات کے بعد وزیراعظم کو اعتماد کا ووٹ لینا چاہیے تھا، احساس پروگرام کےاعداد و شمار کے حوالے سے کمیشن بنایا جائے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.