وہ مسلمان جس کی صرف ایک گاڑی کی قیمت ایک ارب40کروڑ روپے ہے،نام جان کر آپ بھی حیران رہ جائیںگے

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) اسلام ایک امن کا دین ہے جو ہمیں سادگی سے زندگی گزارنے کا درس دیتا ہے مگر بدقسمتی سے ہم سادگی کو چھوڑ کر عیاش پرستی کی جانب چل پڑے ہیں۔ اس وقت دنیا بھر میں مسلمانوں کے زوال کی وجہ آپس میں تفرقہ بازی کے بعد عیاش پرستانہ نوعیت کے کام ہیں۔

دنیا بھرمیں مسلمان حکمرانوں نے اپنی شاہ خرچیوں کے جوریکارڈ قائم کر رکھے ہیں وہ کسی سے ڈھکے چھپے نہیں ہیں ۔میڈیارپورٹس کے مطابق برونائی کے سلطان حسن البولکیاہ کی صرف ایک گاڑی کی قیمت 1ارب 40کروڑ روپے ہے جبکہ ان کے پاس اس نوعیت کی دیگرمہنگی ترین گاڑیوں کی تعداد کم ازکم 7ہزار ہے۔ سلطان حسن البولکیاہ کی ان گاڑیوں میں  ایک رولز رائس سلور سپر لیموزین ایسی ہے کہ اس اکیلی گاڑی کی قیمت 1ارب 40کروڑ روپے ہے۔اس گاڑی کی باڈی پر 24قیراط خالص سونے کی پلیٹ چڑھائی گئی ہے۔ اس کے وہیل کپ اور دیگر کئی حصے بھی سونے کے بنے ہیں اور پوری گاڑی پر مخصوص نقش ونگار بنائے گئے ہیں اوراس کی آرائش کی گئی ہے۔2004ءمیں سلطان کے بیٹے کی بارات 5میل سفر کر کے اسی گاڑی پر گئی تھی اوراس شادی کاچرچا دنیا بھرمیں ہوا تھاجوکہ دنیا کی مہنگی ترین شادیوں میں سے ایک تھی ۔ دوسری جانب دنیا میں کئی افراد ایسے گزرے ہیں جنہوں نے طویل عمر پائی۔ اپنی طویل العمری کا راز ان لوگوں نے شیئر بھی کیا مگر اب برطانیہ کی 106سالہ خاتون نے اپنی طویل العمری کا ایسا راز بتایا ہے کہ جان کر مرد حضرات کے منہ کھلے کے کھلے رہ جائیں گے۔ برطانوی اخبار سے بات کرتے ہوئے میڈلین ڈائی نامی اس خاتون نے بتایا ہے۔

کہ وہ 1912میں برطانیہ کے معروف علاقے جنوبی یارک شائر کے قصبے ہیلے میں پدا ہوئی تھی، میڈلین کا کہنا تھا کہ آج بھی اس کی صحت قابل رشک ہے اور وہ چھڑی یا کسی اور سہارے کے بغیر چلتی پھرتی ہے۔  میڈلین نے اپنی طویل اور صحت مندانہ زندگی کا راز بتاتے ہوئے کہا کہ اس کی زندگی میں کبھی کوئی مردنہیں آیا،شادی تو دور اس نے کبھی کسی کو بوائے فرینڈ بھی نہیں بنایا۔ میڈلین کے مطابق شادی یا مردوں کے ساتھ تعلق سے جو ذہنی پریشانی کا باعث ہوتی ہے اور اس سے دور رہنا ہی اس کی طویل عمر کا راز ہے۔ جبکہ ایک اور خبر کے مطابق سعودی شہزادہ ولید بن طلال نے کہا ہے میں ہفتے میں دو دن روزہ ضرور رکھتاہوں۔رہائی کے بعد بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مجھے سبزیاں بہت پسندہیں۔ اپنی زندگی کے انتہائی اہم پہلو سے پردہ اٹھاتے ہوئے کہا کہ میں ایک لمبے عرصے سے ہفتے میں پیر اور جمعرات کا روزہ رکھتا ہوں اور اللہ کی قربت کے لیے دوسروں کو بھی ہفتے میں دو دن روزہ رکھنا چاہیے۔ شہزادہ ولید بن طلال نے واضح کیا ہے کہ حکومت کے ساتھ انکے تعلقات بہت اچھے ہیں۔ وہ ولی عہد کی تمام پالیسیوں کی حمایتکرتے ہیں۔ ہم سب وطن عزیز، بادشاہ اور ولی عہد کے تابع دار ہیں۔ اس میں کسی کو کسی طرح کا کوئی شک نہیں ہوناچاہئے۔واضح رہے کہ سعودی شہزادہ ولید بن طلال کو پچھلے ہی ہفتے ایک ڈیل کے نیتجے میں رہا کیا گیا تھا ۔لیکن وہ ابھی بھی اپنے گھر میں نظر بند ہیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.