خصوصی عدالت نے ملزم کی اپیل سنتے ہی کیا ریمارکس دیئے؟ کمرہ ِعدالت میں سناٹا چھا گیا

لاہور (نیوز ڈیسک) سانحہ موٹروے، ملزم شفقت اینٹی ٹیررازم کورٹ میں پیش، ملزم کو نقاب پہنا کر عدالت میں کیوں پیش کیا گیا؟ معزز جج کا اعتراض، تفتیشی افسر کو شناخت پریڈ کی کارروائی جلد از جلد مکمل کرنے کی ہدایت، ملزم عدالت سے رحم کی اپیل کرتا رہا۔ تفصیلات کے مطابق آج پولیس نے ملزم شفقت

کو اینٹی ٹیررازم کورٹ میں پیش کیا گیا، دوران سماعت ملزم سے اسکا مؤقف جانا گیا، جس پر شفقت کا کہنا تھا کہ مجھ پر مہربانی کر دیں، عدالت نے پوچھا کہ کیا مہربانی کریں؟ جس پر شفقت کا کہنا تھا کہ مجھے چھوڑ دیا جائے، ملزم شفقت کا ؐؤقف سن کر عدالت نے کہا کہ اگر تم نے کچھ نہیں کیا تو پھر تمہیں چھوڑ دیا جائے گا، فی الحال تمہارا ڈی این اے میچ کر گیا ہے، عدالت نے کیس کی سماعت کو 29 ستمبر تک ملتوی کرتے ہوئے ملزم کو 6 روز کے لیے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا ہے ، ملزم شفقت کی پیشی کے موقع پر عدالت میں سخت سیکورٹی کے انتظامات کیے گئے تھے جس کی وجہ سے احاطہ عدالت میں دیگر سائلین کو کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ دوسری جانب اینکر پرسن فریحہ ادریس کا کہنا ہے کہ پیر کے روز گرفتار ہونے والے ملزم شفقت علی کے بارے میں متاثرہ خاتون نے تصدیق کردی ہے۔تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے فریحہ ادریس نے کہا کہ سانحہ رنگ روڈ کیس میں عابد ملہی کے حوالے سے تمام ادارے متفق ہیں کہ وہ ملوث ہے، پیر کو گرفتار ہونے والے ملزم شفقت کو بھی

متاثرہ خاتون نے شناخت کیا ہے۔فریحہ ادریس کے مطابق ملزم شفقت نے اپنے جرم کا اعتراف کرلیا ہے، ملزم شفقت نے بیان دیا کہ عابد علی سے آخری بار3 روز قبل رابطہ ہوا تھا، شفقت اورعابد نے مل کر 11 وارداتیں کیں۔اس سے قبل خاتون صحافی فریحہ ادریس نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ متاثرہ خاتون لاہور پولیس چیف کی طرف سے مانگی جانے والی معافی سے مطمئن نہیں کیونکہ سی سی پی او کے تبصروں کے نتیجے میں خود وہ اور ان کے اہلخانہ کو انتہائی درد اور تکلیف کا سامنا کرنا پڑا۔متاثرہ خاتون نے اس معاملے میں کاروائی کی اپیل کرتے ہوئے سی سی پی او کو عہدے سے ہٹانے کا مطالبہ کیا ہے۔متاثرہ خاتون کے بیان کے بعد سی سی پی او لاہور نے معافی مانگی جس میں انہوں نے خاتون اور ان کے اہلخانہ سے انہیں ذہنی تکلیف پہنچانے پر معافی مانگ لی ہے۔ گذشتہ روز سی سی پی او لاہور عمر شیخ نے واقعے کے بعد دئیے گئے متنازعہ بیان پر معافی مانگ لی،سی سی پی او لاہور نے لاہور ہائیکورٹ میں پیشی سے قبل یوٹرن لے لیا۔عمر شیخ کا کہنا تھا کہ میرے بیان سے کسی کی دل آزاری ہوئی تومعافی مانگتا ہوں۔میرا کوئی بھی غلط مطلب یا تاثر نہیں تھا۔اپنی بہنوں،بھائیوں اور سوسائٹی سے معافی مانگتا ہوں۔انہوں نے مزید کہا کہ میں اپنی بہن جو متاثرہ ہے،اور تمام طبقات سے معافی مانگتا ہوں۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *