گزشتہ روز پاکستان کی ایک نامور گلوکارہ عدالت کے باہر بیٹھی روتی دکھائی دیں ، آخر ماجرا کیا تھا ؟ افسوسناک انکشاف

لاہور (ویب ڈیسک) نامور گلوکارہ صنم ماروی بچوں کو دیکھنے کے لیے کمرہ عدالت کے باہر روتی رہیں۔لاہور میں گلوکارہ صنم ماروی گارڈین کورٹ پہنچیں جہاں اُن کے سابق شوہر بچوں کے ہمراہ پیش نہیں ہوئے، وہ بچوں کو دیکھنے کے لیے کمرہ عدالت کے باہر روتی رہیں۔صنم ماروی نے اپنے

بیان میں کہا کہ اُنہیں بچوں کے بغیر راتوں کو نیند نہیں آتی، ایک ماں بچوں کے بغیر کیسے رہتی ہے کوئی اور اندازہ نہیں کرسکتا۔انہوں نے کہا کہ 6 ماہ سے سابق شوہر نے زبردستی بچوں کو اپنے پاس رکھا ہوا ہے۔واضح رہے کہ گلوکارہ صنم ماروی نے بچوں کی حوالگی کے لیے گارڈین کورٹ سے رجوع کر رکھا ہے۔ دوسری جانب پنجاب کے وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان پریس کانفرنس کیلئے پہنچے تو ایک خاتون اپنی مغوی بچی کی بازیابی کیلئے ان کے پائوں پڑ گئی، میڈیا رپورٹس کے مطابق خاتون اپنی بچی کی بازیابی کیلئے جب پولیس سے مایوس ہوئی تو اس نے انصاف اور کارروائی کیلئے صوبائی وزیر سے اپیل کی اور اس غرض سے وہ فیاض الحسن چوہان کے پائوں پڑ گئی مگر وزیر اطلاعات پنجاب نے فوری کارروائی کا حکم دینے کی بجائے پہلے پریس میں جانا مناسب سمجھا،فیاض الحسن چوہان کے جانے کے بعد خاتون نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس کی بیٹی 14 اگست سے لاپتہ ہے اور پولیس کوئی کارروائی نہیں کررہی،خاتون نے الزام عائد کیا کہ پولیس والے کہتے ہیں ابھی نمبر ٹریس کر رہے ہیں یا کوئی اور بہانہ بنا کر ٹال مٹول سے کام لے رہے ہیں،خاتون بات کرتے ہوئے آبدیدہ ہو گئیں ،ان کا کہنا تھا کہ سب سانحہ موٹروے والی خاتون کو انصاف دلانے میں لگے ہیں کیا اس کی بیٹی انسان نہیں؟ کیا اسے انصاف نہیں ملنا چاہیے .

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *