اسمبلیاں ٹوٹتی ہیں تو ٹوٹ جائیں۔۔!! وزیر اعظم عمران خان 25 اپریل کے بعد کیا کرنے جا رہے ہیں؟ بڑا فیصلہ ہوگیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) ہر کسی کے علم میں ہے کہ وزیر اعظم عمران خاں ایک اصول پسند آدمی ہیں وہ اصولوں پر کبھی بھی سودے بازی کرنے کے عادی نہیں ہیں۔ ملک بھر میں جاری کورونا کیس کے باوجود وزیر اعظم عمران خاں نے چینی بحران کی رپرٹ کو شائع کر کے ایک ایماندار شخصیت کا ثبوت دیا ہے۔

تجزیہ کار سمیع ابراہیم کا کہنا ہےکہ وزیراعظم عمران خان نے فیصلہ کیا ہے کہ اسمبلی ٹوٹتی ہے تو ٹوٹ جائے 25 اپریل کے بعد کسی کو نہیں چھوڑیں گے۔ سمیع ابراہیم کا کہنا ہے کہ ایجنسیاں کسی طرح سے کسی حکومت کو گرانے کی کوشش نہیں کی، ایجنسیوں کا حکومت بنانے یا گرانے میں کوئی کردار نہیں ہے۔ ماضی میں جب نوازشریف کی حکومت گری تب بھی ن لیگ کی حکومت تشکیل پائی۔وزیراعظم عمران خان نے بڑے لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا ہے اگر ہفتے میں یہ احساس سکیم کے تحت پیسے تقسیم ہو جاتے ہیں تو وزیراعظم عمران خان بڑا لاک ڈاؤن کرنے جا رہے ہیں۔ چینی حکام کی جانب سے وزیراعظم عمران خان کے ساتھ ملاقات کی گئی جس میں کہا گیا کہ پاکستان میں کورونا وائرس چین سے زیادہ تیزی سے پھیل رہا ہے۔چین نے مکمل لاک ڈاؤن کیلئے تجویز پیش کی ہے۔سمیع ابراہیم کا کہنا ہے کہ عوام اس بڑے لاک ڈاؤن کے لئے تیار رہے۔ فیصلہ کابینہ کے اجلاس میں کیا جائے گا کہ لاک ڈاؤن کیا جائے گا یا نہیں ۔واضح رہے اس سے قبل کراچی میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے چینی ماہرین نے کہا ہے کہ پاکستان میں ہائی رسک پاپولیشن میں کورونا وائرس کے پھیلنے کی شرح کافی تشویشناک ہے، حکومت پاکستان اور صوبائی حکومتوں کو مشورہ دیا ہے کہ کورونا وائرس کی ٹیسٹنگ کو بڑھایا جائے اور جو لوگ اس وائرس سے متاثر ہوں انہیں ان کے گھروں، آئسولیشن سینٹرز اور اسپتالوں میں آئسولییٹ کردیا جائے، پاکستان میں میں ماسک پہننے کی شرح بھی انتہائی کم ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.