طیب اردگان کا دورہ پاکستان : اس دورے سے کس طرح پاکستان کی قسمت بدلنے والی ہے ؟ سعودی ولی عہد کو بھی پیچھے چھوڑ دینے والی اطلاعات

اسلام آباد (ویب ڈیسک)ترک صدر رجب طیب اردوان آج اسلام آباد پہنچیں گے ۔ ذرائع کے مطابق دورہ کے دوران تعلیم،دفاع اور اقتصادی شعبوں میں باہمی تعاون کے 10سے 12معاہدوں پر دستخط متوقع ہیں۔ مہمان صدر کا ریڈ کارپٹ استقبال ہو گا اور گارڈ آف آنر بھی پیش کیا جائے گا۔ دورے کے انتظامات مکمل

کر لئے گئے ۔ دفتر خارجہ کی جانب سے جاری تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان کی دعوت پر صدر رجب طیب اردوان 13 سے 14 فروری
2020 تک پاکستان کا دورہ کریں گے ۔ ان کے ساتھ کابینہ کے ممبران اور سینئر سرکاری عہدیداروں پر مشتمل ایک اعلیٰ سطح کا وفد بھی ہوگا ، نیز معروف ترک کارپوریشنوں کے سربراہان بھی انکے ہمراہ آرہے ہیں ۔ وزیر اعظم عمران خان اور صدر اردوان کے درمیان ون آن ون ملاقات ہو گی جس کے بعد وہ مشترکہ پاک ترکی اعلیٰ سطح کی تزویراتی تعاون کونسل (ایچ ایل ایس سی سی) کے چھٹے اجلاس کی صدارت کریں گے ۔ اجلاس کے اختتام پر مشترکہ اعلامیہ پر دستخط ہوں گے ۔ توقع کی جا رہی ہے کہ متعدد اہم معاہدوں اور مفاہمتی یادداشتوں پر دستخط ہونگے جبکہ دونوں رہنماؤں کا مشترکہ پریس سٹاک آؤٹ ہوگا۔صدر اردوان صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علوی سے ملاقات اور پارلیمنٹ آف پاکستان کے مشترکہ اجلاس سے خطاب بھی کریں گے ۔صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کل جمعہ کو دن گیارہ بجے پارلیمنٹ کا اجلاس طلب کرلیا ۔ ترک صدر وزیر اعظم عمران خان کے ساتھ مل کر پاک ترکی بزنس اینڈ انویسٹمنٹ فورم سے خطاب کریں گے ۔ پاکستان میں تعینات ترکی کے سفیر مصطفی یرداکل نے کہا ہے کہ صدر رجب طیب اردوان کا دورہ پاکستان تاریخی واقعہ اور دونوں برادر ملکوں کے درمیان مثالی دوطرفہ تعلقات کی جانب اہم قدم ہو گا، دونوں ملکوں کے درمیان مختلف شعبوں میں تعاون میں اضافے کے حوالے سے متعدد معاہدوں پر دستخط ہوں گے ۔ترک صدر کی پاکستان آمد کے موقع پر سکیورٹی انتظامات مکمل کر لئے گئے ،نور خان ایئر بیس، ایکسپریس وے اور ریڈ زون کو ہائی سکیورٹی زون کا درجہ دے دیا گیا ، ٹریول پلان کے مطابق نور خان ا یئر بیس کے گرد سکیورٹی ہائی الرٹ رہے گی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.