بریکنگ نیوز : پی آئی سی واقعہ۔۔۔ رپورٹ پیش!! سانحہ روکا جاسکتا تھا مگر۔۔۔ وزیراعلیٰ پنجاب کو غلطی بتا دی گئی

لاہور (ویب ڈیسک) پی آئی سی واقعہ، رپورٹ پیش کر دی گئی، وزیراعلیٰ پنجاب کو غلطی سے آگاہ کر دیا گیا۔ وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدار کو پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں وکلا کی ہنگامہ آرائی، توڑ پھوڑ کے واقعہ اور پولیس کے کردار کے بارے میں انکوائری رپورٹ پیش کر دی گئی ہے۔

یہ انکوائری رپورٹ ایڈیشنل آئی جی اظہر حمید کھوکھر نے وزیراعلیٰ کو پیش کی جس میں بتایا گیا کہ پولیس نے وقوعہ کے روز طاقت کا استعمال نہیں کیا جبکہ پولیس کی تعیناتی بھی مناسب نہیں تھی۔ وکلا کو ہسپتال پہنچنے سے پہلے روکا جاتا تو حالات اس نہج پر نہ پہنچتے۔ انکوائری رپورٹ میں کہا گیا کہ وکلا کی ہوائی فائرنگ کے باوجود پولیس نے ناخوشگوار واقعہ سے بچنے کیلئے فائرنگ نہیں کی۔ پنجاب سیف سٹی کے آپریشنل مینجمنٹ اور پروٹوکول پر نظر ثانی کی ضرورت ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہسپتال کے قریب تعینات پولیس فورس کو مناسب طریقے سے گائیڈ نہیں کیا گیا۔ ہنگامہ آرائی کے وقت بروقت فیصلے کرنے کی ضرورت تھی جو نہیں کیے گئے۔ فیصلے کرنے میں ہچکچاہٹ کی وجہ سے صورتحال میں خرابی پیدا ہوئی۔ وزیراعلیٰ نے انکوائری رپورٹ کی سفارشات کابینہ کمیٹی برائے امن وامان کے اجلاس میں پیش کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ سانحہ پی آئی سی کے ذمہ داروں کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔ قانون کو ہاتھ میں لینا افسوسناک اور قابل مذمت ہے۔ غفلت کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی ہوگی۔

Sharing is caring!

Comments are closed.