برطانیہ سے پاکستان آئی دلہن نے گھرکے تمام رشتہ داروں کو موت کے قریب لے گئی، یوسیز کو سیل کیوں کیا گیا؟ اصل کہانی سامنے آگئی

کراچی (ویب ڈیسک) پاکستان میں کورونا وائرس میں اضافے کا سلسلہ جاری ہے اور کراچی میں ایک متاثرہ لڑکی سے گھر کے مزید 18 افراد متاثر ہو گئے۔ تفصیلات کے مطابق ڈپٹی کمشنر ملیر نے ضلع میں گلستان سوسائٹی اور اہراہیم حیدری سب ڈویژن کی چراغ کالونی میں 24 مثبت کیسز

رپورٹ ہونے کے بعد وہاں مکمل لاک ڈاؤن کا حکم جاری کیا۔اس حوالے سے محکمہ صحت کے حکام نے بتایا کہ یہ فیصلہ گلستان سوسائٹی میں ایک ہی خاندان کے 19 افراد کے کورونا وائرس سے متاثر ہونے کے بعد کیا گیا۔انہوں نے بتایا کہ ان تمام افراد کو گڈاپ میں سرکاری ہسپتال کے آئیسولیشن وارڈ میں داخل کردیا گیا۔صحت حکام کا کہنا تھا کہ وائرس کا یہ پھیلاؤ برطانیہ سے آئی لڑکی کی شادی کی تقریب کے بعد دیکھا گیا۔ان کا کہنا تھا کہ شادی کے فوری بعد دلہن کی طبیعت خراب ہوئی اور اس کا کووڈ 19 کا ٹیسٹ مثبت آیا جبکہ ساتھ ہی اس کے 18 دیگر رشتہ دار بھی وائرس سے متاثر ہوگئے۔ دوسری جانب کراچی کی 42 یونین کونسلز کو ڈینجر زون قرار دیکر سیل کردیا گیا، ہاٹ سپاٹ قرار دیے جانے والے علاقوں میں کرونا وائرس سے کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے اقدامات مزید سخت کردیئے گئے ہیں۔فیلڈ ایپی ڈیمیالوجی اینڈ لیبارٹری ٹریننگ پروگرام نے اپنی رپورٹ میں 42 یونین کونسلوں کو خطرناک قرار دیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق وائرس سے سب سے زیادہ گلشن اقبال ٹاؤں متاثر ہے۔ رپورٹ میں گلشن اقبال ٹاؤن کی یونین کونسل نمبر 1، 5، 6، 7، 8، 9، 10 اور 14 کو وائرس کے باعث احساس قرار دیا گیا ہے۔ شاہ فیصل ٹاؤن کی یونین کونسل نمبر 4 اور 9، ملیر ٹاؤن کی یونین کونسل نمبر 3 حساس ہیں۔

Sharing is caring!

Comments are closed.