آئی ایم ایف کی طرف سے پاکستان کو بڑی رعایت مل گئی

لاہور(ویب ڈیسک) حکومت کی کاوشیں کامیاب، آئی ایم ایف سے کرونا وائرس کی روک تھام کے لیے اہم رعایت مل گئی۔ تفصیلات کے مطابق حکومت کی کاوشیں رنگ لے آئیں۔ بین الاقوامی مالیاتی فنڈ نے کرونا وائرس سے نمٹنے کے لئے پاکستان کو اضافی اخراجات خسارے میں شامل نہ کرنے پر رضامندی ظاہر کر دی ہے۔

یہ بات مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے میڈیا کے نمائندوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کی۔مشیر خزانہ کا کہنا تھا کہ ہم کرونا وائرس کی روک تھام کیلئے آئی ایم ایف سے اہم رعایت حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئے ہیں۔ جبکہ وزیراعظم نے مجھے کرونا وائرس کے باعث معیشت پر پڑنے والے اثرات سے نمٹنے کی حکمت عملی وضع کرنے کی ذمہ داری سونپی ہے۔انہوں نے میڈیا سے غیر رسمی گفتگو میں کہا کہ ایسی حکمت عملی وضع کریں گے کہ کرونا وائرس پر اٹھنے والے اخراجات مالی خسارے میں شامل نہیں ہونگے تاکہ معاشی سرگرمیاں متاثر نہ ہوں۔ مشیر خزانہ کا مزید کہنا تھا کہ پوری کوشش کریں گے کہ پاکستان میں اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں کسی صورت اضافہ نہ ہو۔سٹاک مارکیٹ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے مشیر خزانہ نے بتایا کہ پاکستان کی سٹاک مارکیٹ دس سے گیارہ فیصد گری ہے۔ تاہم کوشش ہے کہ کرونا وائرس کے باعث بے روزگاری کے خطرات پیدا نہ ہوں جبکہ کسانوں کو بھی ان کی مصنوعات کا پورا معاوضہ ملتا رہے۔ جبکہ اگر برآمدات میں کمی کا خدشہ پیدا ہوا تو آئی ایم ایف سے معاہدہ میں مزید توسیع کی درخواست کی جائے گی۔دوران گفتگو میڈیا کے نمائندے کی جانب سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ کا کہنا تھا کہ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں آئندہ پیش کیے جانے والے بجٹ میں مناسب اضافہ کیا جائے گا۔

Sharing is caring!

Comments are closed.