بوڑھی ماں کی دل دہلا دینے والی داستان

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) ایک گاؤں میں 10، سال کا لڑکا اپنی ماں کے ساتھ رہتا تھا ، ماں نے سوچا کل میرا بیٹا میلے میں جائے گا، اس کے پاس دس روپے تو ہو، یہ سوچ کر ماں نے كہیں کام کرکے شام تک بیٹے کیلئے پیسے لے آئی ۔ ۔ ۔.بیٹا اسکول سے آکر بولا کھانا کھا کر جلدی سو جاتا ہوں، کل میلے میں جانا ہے۔

، صبح ماں سے بولا میں نہانے جاتا ہوں، آپ ناشتہ تیار رکھنا، ماں نے روٹی بنائی، اور دودھ اب چولہے پر تھا ماں نے دیکھا برتن پكڑنے کے لئے کچھ نہیں ہے، اس نے گرم پتیلا ہاتھ سے اٹھا لیا،ماں کا ہاتھ جل گیا بیٹے نے گردن جھکا کر دودھ روٹی کھائی اور میلے میں چلا گیا ، شام کو گھر آیا تو ماں نے پوچھا – میلے میں کیا دیکھا دس روپے کا کچھ کھایا کہ نہیں ؟ بیٹا بولا ماں آنکھیں بند کر تیرے لئے کچھ لایا ہوں ماں نے آنکھیں بند کی تو بیٹے نے اس ہاتھ میں گرم برتن اٹھانے کے لئے لائی ساڈسي رکھ دی اب ماں تیرے ہاتھ نہیں جلیں گے ۔ ۔ ۔ماں کی آنکھوں سے آنسو بہنے لگے ! ! !دوستوں، ماں کے مراحل میں جنت ہے، کبھی اسے دکھی مت کرو ، سب کچھ مل جاتا ہے، پر ماں دوبارہ نہیں ملتی۔۔۔۔یہ بھی پڑھیں۔۔۔آپ نے روزہ رکھا ہے؟ ایک بوڑھا آدمی چپکے سے کھانے پینے میں مشغول تھا قریب سے گذرتے ہوئے نوجوانوں نے پوچھا چچا کیا آپ نے روزہ نہیں رکھا ؟ بوڑھے آدمی نے جواب دیا میرا روزہ ہے صرف پانی پیتا ہوں اور کھانا کھاتا ہوں نوجوان ہنسنے لگے یہ کیسا روزہ ہے؟؟؟ اس پر بوڑھے آدمی نے کہا میں کسی کی برائی نہیں کرتا، کسی پر بری نظر نہیں ڈالتا، کسی کو برا بھلا نہیں کہتا، کسی کا حق نہیں مارتا، بے ایمانی نہیں کرتا، حرام نہیں کھاتا، سچ بولتا ہوں، کانوں سے غلط بات نہیں سنتا، کسی کی غیبت نہیں کرتا، غلط راہ پر نہیں چلتا، اللہ کی عبادت کرتا ہوں، صرف بیماری کی وجہ سے میں اپنے معدے کو روزے دار نہیں بنا سکا، صرف پانی پیتا اور کھانا کھاتا ہوں، بوڑھے آدمی نے نوجوانوں سے پوچھا کیا آپ سب کا روزہ ہے؟ ایک نے شرمندگی سے سر جھکاتے ہوۓ آہستگی سے کہا نہیں، ہم صرف پانی نہیں پیتے اور کھانا نہیں کھاتے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.