طلباء اور والدین کیلئے بڑی خبر!!15 ستمبر کے بعد پہلے مرحلے میں کونسی کلاسیں لگیں گی؟ فیصلہ ہوگیا

لاہور (ویب ڈیسک) وزیر تعلیم پنجاب مراد راس کی نجی سکولوں کے نمائندوں سے ملاقات میں پندرہ ستمبر کے بعد پہلے مرحلے میں تعلیمی اداروں کو کھولنے کے حوالے سے فیصلہ کر لیا گیا ہے۔ نجی نیوز ذرائع کے مطابق پہلے مرحلے میں پانچویں سے دسویں جماعت کے طلبہ کو بلانے کی اجازت ہوگی۔

تاہم تمام طلبہ کو ایک دن سکول بلانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ محکمہ سکول ایجوکیشن نے نجی سکولوں کو ایس او پیز بتاتے ہوئے 25 اگست تک بچوں کو سکول بلانے کا پلان مانگ لیا ہے۔ جاری ہدایات میں کہا گیا ہے کہ جو بچے ایک دن سکول آئیں گے، ان کو دوسرے دن چھٹی ہوگی۔ نرسری سے چوتھی کلاس کے بچوں کو سکول بلانے کا فیصلہ بعد میں ہوگا۔ وزیر تعلیم پنجاب مراد راس نے کہا ہے کہ ہفتے میں پانچ دن اساتذہ کی ٹریننگ کے لیے اسکولوں کو کھولنے کی اجازت دی جائے گی۔ نجی اسکول مالکان نے لاہور میں صوبائی وزیر تعلیم مراد راس سے ملاقات کی جس میں کورونا کی صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔ اس موقع پر صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ ستمبر کے پہلے ہفتے میں ہونے والے انٹر پروونشنل اجلاس میں اسکول کھولنے کے حوالے سے حتمی فیصلہ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ نجی اسکول مالکان بھی اپنے اساتذہ اور دیگر اسٹاف کو کورونا سے بچاؤ کی تربیت دیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ تمام نجی و سرکاری اسکولوں کی صفائی ستھرائی اور سینی ٹائزیشن کا خیال رکھنا لازم ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ تمام نجی اسکول مالکان سے درخواست ہے کہ ان مشکل حالات میں فیس میں اضافہ نہ کیا جائے۔ پہلی سے چوتھی جماعت تک کے طلباء کو ابھی کچھ عرصے تک سکول نہ بلانے کی تجویز دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سکولوں کو دو شفٹوں یا دنوں کے حوالے سے تقسیم کر کے کھولا جائے گا. ڈاکٹر مراد راس نے یہ بھی کہا کہ سکول کھلنے کا ختمی فیصلہ ستمبر کے مہینے میں ہو گا اور کسی بھی سکول کو 50 فیصد سے زائد طلباء بیکوقت بلانے کی اجازت نہیں ہو گی- اجلاس میں سیکرٹری سکول ایجوکیشن سارہ اسلم سمیت پرائیویٹ سکول مالکان شریک ہوئے جن میں ایچیسن کالج، لاہور گرامر سکول، لکاس سکول، بیکن ہاوس سکول، لرننگ الائنس سکول، دی سٹی سکول، کانوینٹ سکول، سیکرڈ ہارٹ سکول، بلومفیلڈ سکول، پاک ترک مارف سکولز، محمدیہ گرلز ہائی سکول، یونیک سکولز، دار ارقم سکولز، امریکن لائیشم و دیگر شامل تھے.

Sharing is caring!

Comments are closed.