سانحہ موٹروے کے مرکزی مجرم عابد ملہی کی گرفتاری کا معاملہ ۔۔۔ کیس میں اچانک حیران کن پیش رفت

لاہور (ویب ڈیسک)سیالکوٹ موٹروے کیس میں مزید پیش رفت کرتے ہوئے پنجاب پولیس نے لاہور سیالکوٹ موٹروے کیس کے مرکزی ملزم عابد ملہی کی موجودگی کی اطلاع پرڈی جی خان میں ایک مکان پر چھاپہ مارا جہاں سے دو افراد کو حراست میں لے لیا گیا۔ایس پی انویسٹی گیشن ڈی جی خان

فراز احمد نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اطلاع ملنے پر وہ مدنی ٹائون میں قیام پذیر ملزمان کے گھر پہنچے جہاں مکان میں موجود 2 افراد کو حراست میں لے لیا گیا جبکہ گھر کی خواتین سے پوچھ گچھ کی جارہی ہے لیکن خواتین تعاون نہیں کررہیں۔ایس پی انویسٹی گیشن نے بتایا کہ گھرسے ملنے والے کرایہ نامہ کے مطابق 6 روز قبل مکان کرائے پر لیا گیا، گرفتار کیے جانے والے شخص کا نام عمران احمد ہے جب کہ علاقہ مکینوں نے دوسرے ملزم کا نام عامر بتایا ہے۔تفتیشی حکام کے مطابق زیر حراست افراد کا مذکورہ کیس سے تعلق نہیں تاہم پھر بھی ملزمان کے حوالے سے مزید تفتیش کی جارہی ہے اور انہیں نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا۔لاہور سیالکوٹ موٹروے کیس کا مرکزی ملزم عابد تاحال گرفتار نہیں کیا جاسکا۔ ملزم کی گرفتاری کے لئے لاہور پولیس کے شعبہ انویسٹی گیشن نے آٹھ مختلف ٹیمیں تشکیل دی رکھیں تھی۔جو تاحال ملزم کو گرفتار کرنے میں کامیاب نہیں ہوسکی۔ جبکہ دوسری طرف پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ تشکیل دی جانے والی 8 انویسٹی گیشن ٹیموں میں تعینات 4 اعلیٰ پولیس افسران سمیت انویسٹی گیشن ونگ کے 8 افسران نے آئی جی پولیس پنجاب انعام غنی سے زبانی اپنے تبادلوں کی درخواست کر رکھی ہے اور یہ پولیس افسران ان دنوں لاہور سیالکوٹ موٹروے کیس کے مرکزی ملزم عابد ملہی کی گرفتاری پر توجہ دینے کی بجائے اپنے تبادلوں میں مصروف ہیں۔ جس کے باعث پولیس افسران کی اس کیس میں دلچسپی نہ ہونے کے برابر رہ گئی ہے۔ ذرائع کے مطابق پولیس افسران کے تبادلوں کی خواہش سی سی پی او لاہور عمر شیخ کی تعیناتی کے بعد پیدا ہوئی تھی۔

Sharing is caring!

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *