مجھے کیسے پتہ چلا کہ میں کورونا وائرس کا شکار ہوچکا ہوں؟ اسلام آباد میں موجودگی کے دوران کیا ہوا؟ قرنطینہ ہونے کے بعد فیصل ایدھی کا ایم بیان سامنے آگیا

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)فیصل ایدھی نےنجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسلام آباد میں موجودگی کے دوران 16اپریل کو سر درد اور بخار محسوس ہوا تاہم دو دن مسلسل یہی صورتحال رہی تو دوستوں نے مشورہ دیا کہ وہ ٹیسٹ کروائیں ، ان کا کہنا تھا کہ بظاہر دو کوئی علامت

نہیں لیکن ٹیسٹ مثبت آیا ہے ۔ انہوں نے بتایا ہے کہ ڈاکٹر نے ایک ہفتے کیلئے آئسولیشن میں رہنے کا کہا ہے ۔ قبل ازیں ایدھی فائونڈیشن کے سربراہ فیصل ایدھی کی کورونا رپورٹ پازیٹو آگئی،فیصل ایدھی کا ٹیسٹ شفا انٹرنیشنل ہسپتال میں کیاگیا،فیصل ایدھی نے چنددن پہلے وزیر اعظم عمران خان سے بھی ملاقات کی تھی۔فیصل ایدھی کا کورونا وائرس کا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد افراد کی فہرست تیار کی جارہی ہے۔ حالیہ دنوں میں ملاقات کرنے والے افراد سے رابطے کئے جا رہے ہیں،فیصل ایدھی کا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد ایدھی فاؤنڈیشن کے کچھ عملے اور فیصل ایدھی کے اہلخانہ کے بھی کورونا ٹیسٹ کرائے جائیں گے، دوسری جانب فیصل ایدھی نے بیان جاری کرتے ہوئے کہاکہ ڈاکٹرز کے مطابق میں 10 سے 15 روز کے دوران کورونا وائرس کا شکار ہوا ، بدھ کو بخار اور سردرد کی شکایت ہوئی اور تین روز تک یہی علامات رہیں جس کے بعد میں نے کل کورونا کا ٹیسٹ کروایا جو کہ مثبت آ گیا، بظاہر کوئی علامت ظاہر نہیں ہوئی لیکن ٹیسٹ مثبت آ گیا،ان کے صاحبزادے سعد ایدھی نے بتایاکہ گزشتہ ہفتے اسلام آباد میں وزیراعظم عمران خان سے 15 اپریل کو ملاقات کے بعد ہی ان کے والد میں علامات ظاہر ہونا شروع ہوگئی تھیں، یہ علامات چار دن تک رہیں جس کے بعد ٹیسٹ کیاگیا تو آج رپورٹ پازیٹو آگئی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ فیصل ایدھی ابھی اسلام آباد میں ہیں اور ان کی طبیعت بہتر ہے ، کسی ہسپتال میں داخل ہونے کی نوبت نہیں آئی تاہم وہ ازخود قرنطینہ میں ہیں۔واضح رہےکہ فیصل ایدھی نے گزشتہ دنوں وزیراعظم عمران خان سے بھی ملاقات کی تھی اور انہیں کورونا ریلیف فنڈ کے لیے چیک پیش کیا تھا۔

Sharing is caring!

Comments are closed.