فارن فنڈنگ کیس!!!! پیپلزپارٹی بھی میدان میں آگئی، عمران خان پر بڑا الزام لگا دیا

فارن فنڈنگ کیس!!!! پیپلزپارٹی بھی میدان میں آگئی، عمران خان پر بڑا الزام لگا دیا

لاہور: (ویب ڈیسک) پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنماؤں نے پی ٹی آئی کے ممنوعہ فنڈنگ کیس کے الیکشن کمیشن کے فیصلے پر ردعمل کا اظہار کیا ہے ۔پیپلز پارٹی کی مرکزی رہنما شازیہ مری نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کو پہلے سے پتہ تھا کہ وہ مجرم ہیں، تحریک انصاف نے جو بھی بیان

تفصیلات کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنماؤں نے پی ٹی آئی کے ممنوعہ فنڈنگ کیس کے الیکشن کمیشن کے فیصلے پر ردعمل کا اظہار کیا ہے ۔پیپلز پارٹی کی مرکزی رہنما شازیہ مری نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کو پہلے سے پتہ تھا کہ وہ مجرم ہیں،

تحریک انصاف نے جو بھی بیان حلفی جمع کروائے سب جھوٹے ہیں، عمران خان نے عارف نقوی سے دو ملین ڈالر ممنوعہ فنڈز لیے، عمران خان بیرون ممالک سے فنڈنگ لے کر غیر ملکی ایجنڈے پر کام کر رہے تھے، الیکشن کمیشن کے فیصلے کے بعد یہ بات سامنے آئی ہے عمران خان جھوٹے ہیں۔

دوسری جانب وفاقی وزیر خورشید شاہ نے پریس کانفرنس کے دوران عمران خان کو آڑے ہاتھوں لیا ان کا کہنا تھا کہ آئینی اداروں کی ذمہ داری ہے کہ وہ آئین کے مطابق فیصلہ کریں،الیکشن کمیشن کے فیصلے کے بعد گیند آئینی اداروں کی کورٹ میں ہے۔ ادھر پی پی رہنما نئیر بخاری نے کہا کہ صادق و امین قرار پانے والا عمران خان جھوٹا ثابت ہوا ہے،

الیکشن کمیشن کے فیصلے سے عمران خان کو صادق و امین کا سرٹیفکیٹ جاری کرنے والوں کا کردار بھی سامنے آگیا ہے۔ مزید برآں صوبائی وزیر اطلاعات شرجیل انعام میمن نے سابق وزیر اعظم عمران خان کو فوری طور پر نااہل قرار دینے کا مطالبہ کیا۔شرجیل انعام میمن نے عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ثابت ہو گیا

عمران خان نے قوم سے دھوکہ کیا، سچ کو چھپایا نہیں جا سکتا، عمران خان کو صادق اور امین کے جھوٹے سرٹیفکیٹ دیے گئے، الیکشن کمیشن نے عمران نیازی کے بیان حلفی کو غلط قرار دے دیا ہے، عمران خان نے ناصرف قوم بلکہ اوورسیز پاکستانیوں کے جذبات سے کھیل کر اپنی جیبیں بھری ہیں۔

خیال رہے الیکشن کمیشن آف پاکستان کے 3 رکنی بینچ نے پی ٹی آئی ممنوعہ فنڈنگ کیس کا فیصلہ سنایا، جس میں کہا گیا کہ تحریک انصاف پر ممنوعہ فنڈنگ ثابت ہوگئی ہے۔ الیکشن کمیشن آف پاکستان کے 3 رکنی بینچ نے 21 جون کو فیصلہ محفوظ کیا تھا، جو چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ نے آج صبح پڑھ کر سنا دیا، جس کے مطابق پی ٹی آئی کو ممنوعہ ذرائع سے فنڈنگ موصول ہوئی۔ فیصلے میں کہا گیا ہے کہ پی ٹی آئی کو ابراج گروپ سمیت غیر ملکی کمپنیوں سے فنڈنگ موصول ہوئی۔ پی ٹی آئی نے اپنے 16 اکاؤنٹس الیکشن کمیشن سے چھپائے۔ پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان نے الیکشن کمیشن میں مس ڈیکلیریشن جمع کرایا۔ پی ٹی آئی چیئرمین کا سرٹیفکیٹ غلط تھا۔ عمران خان کے بیان حلفی میں غلط بیانی کی گئی ہے۔ الیکشن کمیشن کے متفقہ فیصلے میں مزید کہا گیا ہے کہ پی ٹی آئی نے امریکا سے ایل ایل سی سے فنڈنگ لی۔ پی ٹی آئی نے آرٹیکل 17 کی خلاف ورزی کی ہے۔ کمیشن مطمئن ہوگیا ہے کہ مختلف کمپنیوں سے ممنوعہ فنڈنگ لی گئی ہے۔ پی ٹی آئی نے شروع میں 8 اکاؤنٹس کی تصدیق کی۔ پی ٹی آئی نے 34 غیرملکی کمنیوں سے فنڈنگ لی۔ الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی کو شوکاز نوٹس جاری کردیا، جس میں کہا گیا ہے کہ کیوں نہ آپ کے فنڈز ضبط کرلیے جائیں۔ الیکشن کمیشن نے پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کے فیصلے کی کاپی وفاقی حکومت کو بھجوانے کا فیصلہ کیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.