خطرے کی تلوار کی لٹکنے لگی :1سے 2دن میں حکومت کو گھر بھیجنے کا فیصلہ۔۔۔۔وزیراعظم شہباز شریف کیلئے نئی پریشانی پیدا ہو گئی

خطرے کی تلوار کی لٹکنے لگی :1سے 2دن میں حکومت کو گھر بھیجنے کا فیصلہ۔۔۔۔وزیراعظم شہباز شریف کیلئے نئی پریشانی پیدا ہو گئی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) واضح رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے 131 اراکین قومی اسمبلی کے استعفے منظور کرنے کے حوالے سے اہم پیش رفت ہوئی ہے۔

اسپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف نے خورشید شاہ، ایاز صادق اور خواجہ سعد رفیق سے مشاورت کے بعد تحریک انصاف کے اراکین قومی اسمبلی کے استعفے مرحلہ وار منظور کرنے کا فیصلہ کیا۔

اس حوالے سے قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کے اعلامیہ کے مطابق تحریک انصاف کے 11 اراکین قومی اسمبلی کے استعفے منظور کیے گئے ہیں، ان میں ڈاکٹر شیریں مزاری، علی محمد خان، فرخ حبیب، فضل خان، شوکت علی، فخر زمان، اعجاز شاہ، جمیل احمد خان، اکرم چیمہ، شکور شاد، شاندانہ گلزار شامل ہیں۔

بتایا گیا ہے کہ مذکورہ 11 ایم این ایز کے استعفے منظور کیے جانے کے بعد انہیں ڈی نوٹیفائی کرنے کیلئے الیکشن کمیشن کو باقاعدہ مراسلہ بھی بھیج دیا گیا۔ جس پر الیکشن کمیشن نے ان اراکین کو ڈی نوٹیفائی کر دیا ہے۔

یہ بھی واضح رہے کہ تحریک انصاف کے 20 منحرف اراکین قومی اسمبلی اب بھی ایوان کا حصہ ہیں۔جبکہ فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ 1 سے 2 دن میں فیصلہ کرلیں گے کہ اس حکومت کو کب گھر بھیجنا ہے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے 11 اراکین قومی اسمبلی کے استعفے منظور کیے جانے پر فواد چوہدری کی جانب سے ردعمل دیا گیا ہے۔

اے آر وائی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ میرے اور فرخ حبیب کے استعفے میں کیا فرق ہے؟ ساتھ ہی استعفے دیئے تھے، ملک میں اب ضمنی الیکشن نہیں ہونے بلکہ عام انتخابات ہونے ہیں اور عام انتخابات کب ہونے ہیں اب یہ ہم نے طے کرنا ہے۔فواد چوہدری نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ عام انتخابات کا اعلان کریں اور الیکٹورل ریفارم کیلئے سب کو بلائیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمارےایک دوپوائنٹس ہیں جس پر کام ہو رہا ہے، بس 1 سے 2 دن میں فیصلہ کرلیں گے کہ اس حکومت کو کب گھر بھیجنا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.