پنجاب حکومت کی پابندی کے باوجود پی ٹی آئی رہنما لاہور پہنچ گئے، کار میں بیٹھ کر فرار، پولیس منہ دیکھتی رہ گئی

پنجاب حکومت کی پابندی کے باوجود پی ٹی آئی رہنما لاہور پہنچ گئے، کار میں بیٹھ کر فرار، پولیس منہ دیکھتی رہ گئی

لاہور: (ویب ڈیسک) پنجاب میں داخلے پر پابندی کے باوجود پی ٹی آئی رہنما مقبول گجر لاہور پہنچ گئے۔ جوہر ٹاؤن پولیس نے مقبول گجر کو روکا اور ایس ایچ او

عاطف ذوالفقار نے سرکاری کاغذ پر دستخظ کروائے۔ پولیس نے مقبول گجر کو تھانے لے جانے کی کوشش کی، تاہم وہ دوسری کار میں بیٹھ کر فرار ہو گئے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب میں داخلے پر پابندی کے باوجود پی ٹی آئی رہنما مقبول گجر لاہور پہنچ گئے۔ جوہر ٹاؤن پولیس نے مقبول گجر کو روکا اور ایس ایچ او عاطف ذوالفقار نے سرکاری کاغذ پر دستخظ کروائے۔

پولیس نے مقبول گجر کو تھانے لے جانے کی کوشش کی، تاہم وہ دوسری کار میں بیٹھ کر فرار ہو گئے۔ مقبول گجر کو ٹریس کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

صوبائی وزیر داخلہ عطا اللہ تارڑ نے کہا کہ علی امین گنڈا پور اور مقبول گجر پر پنجاب میں داخلے پر پابندی قانونی طور پر لگائی گئی، مقبول گجر کو پنجاب داخلے پر پابندی کا علم ہونے کے باوجود

پنجاب میں داخلے کی کوشش ان لوگوں کے مذموم مقاصد ظاہر کرتی ہے۔ عطاء اللہ تارڑ نے کہا کہ مقبول گجر کے پنجاب میں داخلے کے پلان سے ان کے خطرناک ارادے ظاہر ہوگئے ،

پابندی اس لئے لگائی گئی کہ خدشہ موجود تھا کہ اسلحہ سے لیس جتھے پختونخواہ اور آزاد کشمیر سے پنجاب آئیں گے، ان کا ارادہ تھا کہ ضمنی الیکشن کے دوران امن و امان کی صورتحال خراب کریں۔ خیال رہے گزشتہ روز صوبائی حکومت پنجاب نے پی ٹی آئی رہنما علی امین گنڈاپور اور مقبول گجر کے پنجاب میں داخلے پر پابندی لگا دی۔ اس حوالے سے ایڈیشنل چیف سیکریٹری ہوم کی جانب سے جاری نوٹی فکیشن کے مطابق علی امین گنڈا پور اور مقبول گجر کے خلاف پنجاب میں داخلے پر 4 روزہ پابندی ہے۔ نوٹی فکیشن کے مطابق دونوں شخصیات کے حوالے سے الیکشن کمیشن نے خدشات کا اظہار کیا تھا کہ یہ لاہور اور دیگر حلقوں میں پولنگ اسٹاف اور دیگر لوگوں کو ہراساں کر سکتے ہیں۔ علاوہ ازیں یہ دونوں شخصیات انتخابی عمل کو خراب اور ووٹروں کو ہراساں کر سکتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.