انتقامی کارروائی یا معاملہ کچھ اور!!! پنجاب میں حکومت تبدیلی کے بعد پی ٹی آئی کا مرکزی رہنما گرفتار

انتقامی کارروائی یا معاملہ کچھ اور!!! پنجاب میں حکومت تبدیلی کے بعد پی ٹی آئی کا مرکزی رہنما گرفتار

کوٹری: (ویب ڈیسک) اینٹی کرپشن ڈائریکٹر ذیشان میمن نے تحریک انصاف کے رہنما حلیم عادل کو گرفتار کرلیا۔ حلیم عادل شیخ اینٹی کرپشن جامشورو میں اپنے مقدمے کی سماعت میں پہنچے تھے،

جہاں سے انہیں گرفتار کیا گیا۔ سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈرحلیم عادل شیخ اپنے خلاف درج جعلسازی اوردھوکہ دہی کے مقدمے میں بیان ریکارڈ کرانے تھانہ اینٹی اسٹیبلشمنٹ جامشورو پہنچے تھے۔

حلیم عادل شیخ اورپانچ دیگرافراد کے خلاف تھانہ اینٹی اسٹیبلشمنٹ میں 63 ایکڑ اراضی جعل سازی سے نام کرانے اور اس پر زرعی بینک سے قرضہ لینے کامقدمہ درج ہے۔ حلیم عادل کو بیان ریکارڈ کرانے کے لیے سرکل آفیسر ذیشان حیدر نے طلب کیاتھا۔

حلیم عادل شیخ اس مقدمے میں صوبائی انسداد بدعنوانی عدالت سے عبوری ضمانت پر ہیں۔ دوسری جانب تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری نے کہا ہے کہ وفاقی حکومت کو گرانا کوئی مسئلہ نہیں

کیونکہ اس وقت وفاق وینٹیلٹر پر ہے ہم جب چاہیں اس کا سوئچ کھینچ دیں۔ اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ رانا ثناءاللہ ہوش کے ناحن لیں، سپریم کورٹ کے ججز نے ہی عمران خان کو گھر بھیجا، ہمیں بھی بہت تحفظات ہیں لیکن یہ عدالت کا فیصلہ ہے جو قبول کر لینا ہے۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ ن لیگ اب چھوٹی حرکتوں پر اتر آئی ہے، کل پرویز الٰہی کا حلف سرکاری ٹی وی پر نہیں دکھایا۔ انہوں نے واضح کیا کہ موجودہ الیکشن کمیشن کے ہوتے ہوئے شفاف الیکشن ممکن نہیں۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ پہلے نئے اسپیکر اور ڈپٹی سپیکر کا نام فائنل ہوگا، اس کے بعد پنجاب کابینہ حلف اٹھائے گی، کچھ دیر قبل پرویز الٰہی اور عمران خان کی ملاقات ہوئی، کل عمران خان لاہور جائیں گے۔ ادھر وفاقی حکومت نے سپریم کورٹ کے اختیارات پر قانون سازی کا فیصلہ کرلیا۔ وزیراعظم شہباز شریف کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ہوا۔ کابینہ نے سپریم کورٹ کے ازخود نوٹس اور چیف جسٹس کے بینچ تشکیل دینے کے اختیارات پر قانون سازی کا فیصلہ کرلیا۔ وزیر داخلہ رانا ثناء اللہ نے بتایا کہ عدالتی اصلاحات پر پارلیمانی کمیٹی بنے گی۔ علاوہ ازیں سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن، تمام صوبوں کی ہائی کورٹ بارز، پاکستان بار کونسل، صوبائی بار کونسلز اور جوڈیشل کمیشن کے رکن و نامزد ارکان نے اپنی ایک مشترکہ قرارداد میں سپریم کورٹ کے اختیارات محدود کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.