نرم مداخلت کے کوئی اشارے ہمیں نہیں آ رہے!!!! اسٹیبلشمنٹ سے بات چیت کے حوالے سے تحریک انصاف نے صاف صاف بتا دیا

نرم مداخلت کے کوئی اشارے ہمیں نہیں آ رہے!!!! اسٹیبلشمنٹ سے بات چیت کے حوالے سے تحریک انصاف نے صاف صاف بتا دیا

اسلام آباد: (ویب ڈیسک) سابق وزیر دفاع و پاکستان تحریک انصاف کے رہنما پرویز خٹک نے سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ

میرے ساتھ ن لیگ کے کسی شخص نے رابطہ نہیں کیا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ نرم مداخلت کے کوئی اشارے ہمیں نہیں آرہے، کوئی بات چیت نہیں

تفصیلات کے مطابق سابق وزیر دفاع و پاکستان تحریک انصاف کے رہنما پرویز خٹک نے سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ میرے ساتھ ن لیگ کے کسی شخص نے رابطہ نہیں کیا۔

ان کا مزید کہنا تھاکہ نرم مداخلت کے کوئی اشارے ہمیں نہیں آرہے، کوئی بات چیت نہیں ہمارا مطالبہ ہے کہ الیکشن کرائیں، حالات بگڑ رہے ہیں، سنبھال نہیں سکیں گے لہٰذا بہتر ہے عوام کو فیصلہ کرنے دیں۔

پرویز خٹک کا کہنا تھاکہ اسٹیبلشمنٹ سے کوئی بات چیت نہیں ہورہی، ہم سیاسی سوچ رکھنے والے ہیں، مجھے ابھی تک کوئی مداخلت نظر نہیں آرہی۔ ادھر پی ٹی آئی رہنما رہنما اسد عمر کی اسلام آباد ہائیکورٹ بار کے برداشت اور عدم برداشت کے موضوع پر سیمینار میں خطاب کے دوران زبان پھسل گئی۔

دوران خطاب انہوں نے ‘عدم برداشت’ کی جگہ ‘عدم اعتماد’ کہہ دیا اور کہا کہ شعیب شاہین نے مجھے عدم اعتماد (عدم برداشت) کے لیے بلایا ہے۔ اسد عمر نے کہا کہ میں 4 سال سے کہتا آ رہا ہوں کہ سیاستدانوں کو آپس کے معاملات خود دیکھنے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک مختلف گروہوں میں بٹا ہوا ہو، اعتماد کا لیول کم ہو تو معاشرہ ترقی نہیں کرتا، عدم برداشت کیا چیز ہوتی ہے، برداشت کیا چیز ہوتی ہے، ہمیں کیسے نکلنا ہوگا۔ پی ٹی آئی رہنما نے خطاب کے دوران کہا سیاسی رہنما اگر زبان کا شائستگی سے استعمال کریں تو سب بہتر ہوگا، اگر سیاستدان آپس میں بیٹھنے کو تیار ہی نہیں تو کسی اور سے رابطہ کرنا پڑتا ہے، ایسا کوئی مسئلہ نہیں کہ آپس میں بیٹھ کر بات نہیں کی جا سکتی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.