فیصل آباد میں طالبہ پر تشدد؛ ‘جب قانون کمزور ہو تو طاقت ور کو شہ ملتی ہے’

فیصل آباد میں طالبہ پر تشدد؛ ‘جب قانون کمزور ہو تو طاقت ور کو شہ ملتی ہے’

پاکستان کے شہر فیصل آباد میں میڈیکل کی طالبہ کے ساتھ انسانیت سوز سلوک کے معاملے کی تحقیقات جاری ہیں، پولیس نے شریک ملزمہ کا نام اسٹاپ لسٹ میں ڈلوانے کے لیے وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) سے رُجوع کر لیا ہے۔

میڈیکل کی طالبہ پر مبینہ تشدد اور اسے زبردستی جوتے چاٹنے پر مجبور کرنے کے معاملے پر پاکستان میں شدید ردِعمل سامنے آیا ہے، سوشل میڈیا پر بھی یہ معاملہ موضوع بحث ہے۔

سٹی پولیس آفیسر فیصل آباد عمر سعید ملک کہتے ہیں کہ اُنہیں شکایت کنندہ لڑکی اور ملزمان کی نجی زندگی سے کوئی سروکار نہیں، پولیس اس انسانیت سوز رویے، جنسی استحصال، مار پیٹ اور دیگر جرائم کے حوالے سے تفتیش کر رہی ہے۔

وائس آف امریکہ سے گفتگو کرتے ہوئے عمر سعید ملک کا کہنا تھا کہ واقعے کی تہہ تک پہنچنے کے لیے ایس پی انوسٹی گیشن کی سربراہی میں ایک پانچ رُکنی کمیٹی تشکیل دے گئی ہے جس میں ایک خاتون پولیس افسر بھی شامل ہیں۔

اُن کے بقول ملزمہ انا شیخ کو بیرونِ ملک جانے سے روکنے کے لیے اُن کا نام 30 دن کے لیے اسٹاپ لسٹ میں ڈلوانے کی سفارش کی گئی ہے۔

عمر سعید ملک کا کہنا تھا کہ پولیس کی پوری کوشش ہے کہ متاثرہ طالبہ کو انصاف ملے اور ملزمان کو سخت سے سخت سزا دلوائی جا سکے۔ اُن کا کہنا تھا کہ واقعے میں ملوث دیگر ملزمان کی گرفتاری کے لیے بھی چھاپے مارے جا رہے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *