یا اللہ تیرا شُکر۔!! کورونا وائرس کا علاج پاکستانی ڈاکٹروں کے ہاتھوں میں آگیا۔۔۔ عوام الناس کو خوشخبری سنا دی گئی

ایبٹ آباد (ویب ڈیسک) کورونا وائرس کا علاج پاکستانی ڈاکٹروں کے ہاتھوں میں آگیا، عوام الناس کو خوشخبری سنا دی گئی۔ پاکستان کو کورونا وائرس کا علاج دریافت کرنے والے ممالک میں شامل کر لیا گیا اور دوا کا تجربہ کرنے کی اجازت مل گئی۔ ایوب میڈیکل کمپلیکس کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر عمر فاروق

کی سربراہی میں 20 رکنی ٹیم کورونا کے مریضوں پر تجربات کرنے کے لیے اہل قرار پائے،امریکی قومی ادارہ صحت کی لائبریری برائے ادویات نے پاکستانی ادارے اور ماہرین کی ٹیم کی قابلیت اور سہولیات کا اعتراف کرتے ہوئے دوا کا تجربہ کرنے کی اجازت دی ہے۔ ایبٹ آباد کے ایوب میڈیکل کمپلیکس کے سربراہ پرفیسر ڈاکٹر عمر فاروق نے نجی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ کورونا کے پچیس پچیس مریضوں کے تین گروپ بنائے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایک گروپ کو2 ادویات ازتھرومائسین اور کلورو کوائن دی جائیں گی۔ دوسرے گروپ کے مریضوں کے علاج کے لیے ایک دوا کلوروکوائن کا تجربہ کیا جائے گا۔ پروفیسر ڈاکٹر عمر فاروق نے بتایا کہ تیسرے گروپ میں شامل پچیس مریضوں کو ازتھرومائسین اور کلورو کوائن دینے کی بجائے دنیا میں رائج روائتی طریقہ علاج اختیار کیا جائے گا۔ پروفیسر ڈاکٹر عمر فاروق کے مطابق اس تجرباتی علاج میں مریضوں کا چناؤ ان کی صحت، عمر اور کورونا کے مرض سے متاثر ہونے کی شدت کی بنیاد پر کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ دل کے عارضہ یا ایسے ہی کسی دوسرے بڑے مرض کے شکار شخص کو ٹرائل کا حصہ نہیں بنایا جائے گا۔ پروفیسر ڈاکٹر عمر فاروق کے مطابق تینوں گروپ سے حاصل کردہ نتائج امریکی ادارہ برائے قومی صحت کو بھجوائے جائیں گے۔ امریکہ کی فیڈرل ڈرگ ایجنسی کی منظوری کے بعد کورونا وائرس کے علاج کی دوا دنیا کو میسر آنے کی امید کی جا سکتی ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.