وفاقی کابینہ میں ’ کورونا‘ کے مریض کی موجودگی۔۔!! مریض کون نکلا؟ اجلاس کے دوران کھلبلی مچ گئی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) وفاقی کابینہ میں کورونا وائرس کے مریض کی موجودگی سے کھلبلی مچ گئی،مذکورہ افسر کو اسلام آباد سے کراچی کے ایک اسپتال میں منتقل کر دیا گیا۔تفصیلات کے مطابق معروف صحافی سہیل اقبال بھٹی کا کہنا ہے کہ پاکستان میں ہر گزرتے گھنٹے کے بعد صورتحال خراب ہو رہی ہے۔

وزیراعظم نے گذشتہ چار روز کے دوران غیر معمولی اقدامات کیے ہیں،کورونا وائرس کا شکار ایک مریض وفاقی کابینہ میں موجود رہا،وہ گریڈ 21 کا آفیسر ہے جو کابینہ کے اجلاس میں موجود رہتا ہے۔موجودگی کا پتہ چلنے پر سرکاری اداروں میں کھلبلی مچ گئی،اس افسر کو اسلام آباد سے کراچی کے ایک اسپتال میں منتقل کر دیا گیا ہے۔اب اس کی حالت ٹھیک ہے۔اب اجلاس میں بھی نئے ایس او پیز کے مطابق ویڈیو لنک کے ذریعے کیے جائیں گے۔سہیل اقبال بھٹی نے مزید کہا کہ وزیراعظم تک مختلف رپورٹس پہنچی ہیں جن کی وجہ سے عمران خان نے اقدامات کا فیصلہ کیاہے۔پاکستان میںنفارمو سیوٹیکل کمپنیوں کا رسوخ ختم کیا جائے۔جب کہ دوسری جانب وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کورونا وائرس ایک قسم کا زکام ہے اور یہ تیزی سے پھیلتا ہے، کورونا کے خوف کی وجہ سے افراتفری نہیں پھیلنی چاہئے،کورونا وائرس سے گھبرانا نہیں احتیاط ضروری ہے۔ ہم نے احتیاط برتنی ہے اور ذمہ داری سے کام لینا ہے، 15 جنوری کو ہم نے فیصلہ کیا کہ کورونا وائرس کے مسئلے سے نمٹنے کیلئے کیا اقدامات کرنے ہیں۔منگل کو وزیراعظم عمران خان نے قوم سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ چین میں جب یہ وائرس پھیلا تو ہمیں یہ معلوم تھا کہ چین سے بھی لوگ پاکستان آئیں گے، یہ وائرس ایک قسم کا زکام ہے اور یہ تیزی سے پھیلتا ہے۔

Sharing is caring!

Comments are closed.